Google
9
Nov

ایک اور لوو سٹوری

بھیجا ہے  ڈفر نے کُچھ نا پُچھ, کیفے ڈی بکواس میں

3,692 بار دیکھا گیا
  • یار میں جب یونیورسٹی میں تھا نا تو مجھے ایک لڑکی بڑی اچھی لگتی تھی
  • کیا خاص بات تھی اس میں؟
  • کچھ خاص نہیں یار، بس اسے دیکھ کر ”کچھ کچھ“ ہونے لگتا تھا
  • ہشیاری آ جاتی تھی؟
  • نہیں یار بڑی اچھی سی تھی
  • اس عمر میں کوئی بری بھی لگتی ہے؟
  • نہیں یار سمجھا نہیں
  • ہاٹ اینڈ سیکسی تھی؟
  • یار بڑی شریف سی تھی
  • باقیوں کے ایم ایم ایس آئے وے تھے؟
  • او یار ”بھائی“ کو اچھی لگتی تھی بس وجہ کی کیا بات ہے
  • اوکے اگر اچھا لگنے لگانے والا چکر ہے تو ہمیں کیا اعتراض ہو سکتا بھلاؕ۔ فیر کیا نتیجہ نکلا اس اچھے لگن لگائی کا؟
  • بس یار وہ بڑی ڈیسنٹ سی بچی تھی اور کہاں میں موچی الشکل
  • آج کیسے یاد آ گئی؟
  • یار میں اسکی فیس بک پہ تصویریں دیکھ را تھا انتہائی منحوس ہو گئی اب۔ اب تو اتنا بڑا بچہ بھی ہے اسکا (اپنی تنی پر ہاتھ لگا کر اس نے یقینا بچے کا سائز بتایا)
  • اور اب تو دوسروں کی امیوں پہ نظر رکھے گا؟ بے غیرت انسان!
  • یار ویسے ہی نظر پڑ گئی تو یاد آ گئی بوسیدہ لَوو سٹوری
  • سٹوری کیا تھی؟
  • بس یار وہ اچھی لگتی تھی مجھے۔ اور تجھے تو پتہ ہے ہم جیسے لوگ تو کلاس میں سبق سنانے لگیں تو مثانے پہ پریشر پڑ جاتا ہے۔ تو بس اظہار کی ہمت اور گٹس ہی کوئی نی تھے
  • تو کچھ نی ہویا؟
  • نہیں
  • کسی کو کہہ کہلوا کے ہی بات چیت شروع کروا لیتا
  • سارے ہی کنڈا ڈالنے کے چکروں میں تھے میری ہیلپ کون کرتا
  • یعنی یہ سٹوری دوران حمل ہی موت کا شکار ہو گئی؟
  • کہہ سکتے ہیں
  • پکی بات نہیں؟
  • یار کچی پکی کیا۔ آخر ایک دن میری پھٹو نیس سے تنگ آ کے اس نے خود ہی مجھ سے بات کر لی
  • یہ چیز، بچیاں بڑی تیز ہوتی ہیں بیٹا۔ کیا بات کری؟
  • فوٹو سٹیٹ پہ کافی رش تھا نوٹس لینے کے لئے وہاں کھڑا تھا۔ میری باری آئی تو آواز آئی ”عیدو!“۔ مڑ کے دیکھا تو مڑا رہ گیا
  • یعنی اصل مسئلہ اس وقت ”مڑنے“ سے سٹارٹ ہوا نا؟
  • اور یار بات تو سن
  • اچھا سنا نا ڈارلنگ غصہ کیوں کر را؟
  • کہنے لگی، میں لے لوں؟ پوائنٹ جانے والا ہے۔ آپ دوسرا سیٹ لے لیجئے گا۔ اب تجھے تو پتہ بھائی اس وقت جان بھی دے سکتا تھا۔ ”جی بالکل“، میں نے کہہ دیا۔ اس نے نوٹس لئے اور ”تھینک یو بھائی“ کہہ کے چلی گئی حرامن، ۔۔۔ کی ۔۔۔ نہ ہو تو۔ اس کے بعد کیمپس نے سارا سمیسٹر میری جو ایسی تیسی کری بس نہ پوچھ۔ یہ تھی ایک ملاقاتی سٹوری اس محبت کی :'(
  • تو اس کہانی سے دو نتائج برآمد ہوئے
  • ۱۔ اول یہ کہ وہ ابھی تک بہت فٹ ہے تجھے کسی وجہ سے منحوس لگ ری
    ۲۔ دوم تجھے اس سے محبت تھی یا نہیں تھی ”بھائی“ والی ساڑ ضرور ہے 😀

    اب آ کے اپنی نحوست پھیلا ہی دی تو کمنٹ کر کے تابوت میں آخری کیل بھی ٹھوک دے

    ابتک تبصرہ جات 9

     1 

    یہ بھائی لفظ ایجاد کس کے بھائی نے کیا تھا ویسے ؟ :roll:

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 9, 2014 بوقت 8:40 شام
    ضیاء الحسن خاں
     2 

    بڑا ہی منحوس اور موچی الشکل بھائی ہے تو بھائی 🙂 اور یہ تو اپنی سٹوریز کو فرضی بنا کے کیوں پیش کرتا ہے :mrgreen:

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 9, 2014 بوقت 8:41 شام
    خلیل احمد
     3 

    ہاہاہاہاہا نوے کی دہائی کے نوے فیصد تالبلموں کا حال

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 9, 2014 بوقت 8:47 شام
     4 

    وہ عشق جو ہم سے روٹھ گیا۔۔۔۔۔۔ :mrgreen:
    یعنی کفر ٹوٹا خدا خدا کرکے۔ واپسی مبارک ہو۔

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 9, 2014 بوقت 8:52 شام
     5 

    آج فجر بھی قضا ہوئی.
    سلام نہ درود پڑھنے بیٹھ گئے
    بلاگ مردود 😆

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 10, 2014 بوقت 2:48 صبح
    عثمان سہیل
     6 

    جگر!
    تب کیوں نے بتایا میرے کو 😀

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 10, 2014 بوقت 10:59 صبح
     7 

    مجھے لگے کہ اسی اشٹوری نے آپکو برقع پہننے پہ مجبور کرا :roll: 😆

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 10, 2014 بوقت 1:39 شام
     8 

    😉 ٹھیک

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    نومبر 11, 2014 بوقت 3:53 شام
     9 

    good story ………. and nice information

    اسے ذرا جوابیں تو سہی

    فروری 9, 2015 بوقت 8:27 شام

    لنک پوسٹ کرنے کی اجازت نہیں، سپیس ڈال کر لنک بریک کردیں، ربط والے تبصرے ختم کر دئے جاتے ہیں

    نام (*)
    ای میل (ظاہر نہیں کیا جائے گا)*
    ویب ایڈریس
    پیغام

    Follow us on Twitter
    RSS Feed فائر فاکس پر سب سے بہترین نتائج واپس اوپر جائیں
    English Blog