Google
19
Feb

ایک بوتل کی آپ بیتی

بھیجا ہے  ڈفر نے آ لو پیاز میں

3,407 بار دیکھا گیا

”بد سے بدنام برا“، آپ نے صرف سنا ہو گا، میں نے تو پل پل سہا بھی ہے۔ آپ کیا جانیں پارساؤں کی بدنامی کے دکھ۔ آپ نے تو سنی سنائی باتوں پر کان پکے کر لئے بلکہ دو چار اپنے پاس سے بھی لگا دیں اور بس، ہو گئیں آپ کہ ذمہ داریاں پوری۔ جیسے فیضو کہتا تھا کہ میرے پاس مشرف کی خالی کی ہوئی ”بوتل“ ہے، تو اس میں ایسی کیا بڑی بات ہے؟ مشرف نے کیا آج تک ایک ہی بوتل خالی کی ہے؟ یا آج تک صرف مشرف نے ہی بوتل خالی کی ہے؟ ایسا کیا کر دیا مجھ بیچاری نے کہ فلمیں بنیں تو بدنام ہوں میں غریب، گانوں میں گالیاں ملیں تو مجھ بیچاری کو؟ پئے امیتابھ، قصور وار اس کا باپ، دیکھیں آپ، بزنس کرے بالی ووڈ اور بدنام کون؟ بوتل۔
بازار میں بیٹھنے والی کی بھی کوئی مرضی ہوتی ہے لیکن ہماری۔۔۔؟ توڑ دیا ٹوٹ گئیں ، پھوڑ دیا پھوٹ گئیں۔ وجہ خوشی ہو یا غم بس آپ کے حکم کے تابع، لیکن اجر کیا؟ صرف بدنامی۔ ارے آپ لوگوں کا بس چلے تو ساری دنیا کے مسائل اور مشکلات کو میرے سر منڈھ دیں۔ کھلی سڑک کہیں تنگ ہو جائے تو میری گردن بدنام۔ ارے باٹل نیک سے اتنی ہی نفرت ہے تو منع کریں اپنی لگتیوں کو کہ ہماری شیمپینی بہنوں کا استعمال بند کریں۔ نہیں نہیں، میں انکی حمایت نہیں کر رہی لیکن اس میں انکا بھی کیا قصور ہے؟ آپ کسی ایک بدکار مرد یا عورت کی وجہ سے پوری مرد یا عورت ذات سے تو نفرت نہیں کر سکتے نا؟ تو ہمارے ایک قبیلے کی وجہ سے پوری بوتل ذات بدنام کیوں ہے؟ بنائیں آپ، بھریں آپ، پئیں آپ دونوں ، خالی ہونے کے بعد استعمال کریں آپ کی چہیتیاں اور بدنام کون؟ بوتل۔
ویسے بھی ہر چیز کا منفی پہلو دیکھنا حضرت انسان کی ہی خوبی ہے لیکن بوتلوں کے کم رسیا تو آپ بھی نہیں۔ ہر روز ناکام ہوئی محبت کے چکر میں ادھر اُدھر منہ مار کر غم مٹانے کے لئے آپ ”بھری بوتلوں“ کا سہارا لیتے ہیں۔ اس وقت میری ہر بدی بھول جاتی ہے، یاد رہتے ہیں تو صرف چار لفظ، ریگولر یا نیٹ، سوڈا یا آئیس۔ لفظ آپ کے، انتخاب آپ کا، مزے آپ کے، حتیٰ کہ مرضی بھی آپ کی اور بدنام کون؟ بوتل۔ وہ بیچاری تو ہمیشہ اپنے دکھڑے روتی رہتی ہے کہ بھری ہوں یا خالی، دن رات شغل فرماتے ہیں ”آپ لوگ“ اور ہوش میں آتے ہی یا دل بھرتے ہی اسکے نصیب میں کچرادان اور گالیاں۔ لیکن ہم تو چاہیں بھی تو بول نہ پائیں، کیونکہ ہم تو ٹھہرے بے زبان اور بدنام۔
میرے فائدے بھول گئے آپ؟ بچپن سے لے کر پچپن تک۔ گرائپ واٹر سے لے کر آپکی بڑھاپے کی دوائیوں تک آپ مقروض ہیں میرے۔ پانی سے لے کر بخار کی دوائی تک آپ میرے احسانوں تلے دبے ہوئے ہیں۔ پی پی کر گردے خراب ہوں آپ کے اور پیشاب ٹیسٹ کرانے جائے کون؟ بوتل۔ رضائی ٹھنڈی ہو آپ کی اور گرم پانی ڈالا جائے کس میں؟ بوتل میں۔ مرض آپ کے اور دوائیاں بھری جائیں ہم میں۔ بھول جاتے ہیں کہ کس کے منہ سے نکلا اپنے چمچ میں انڈیلتے ہیں، بلکہ بھولیں گے کیا کبھی یاد کرنے کی کوشش بھی نہیں کی ہو گی۔ خیر آپ کا قصور نہیں آپ تو ہیں ہی نا شکرے اور میری فطرت تو ظلم سہہ کر بھی فائدہ دینا ہے۔
دوا کے لئے استعمال کریں یا دارو کے لئے، پیشاب رکھیں یا جن اور خط بند کریں، انسان کی فطرت میں ہے ہی نہیں شکر گزاری۔ ابھی کل ہی کی بات ہے آدھی رات کو ڈفر نے مجھے اچانک آ کر دبوچ لیا، میرے سینے کو اس زور سے بھینچ لیا اور میری گردن پہ ایسی زور آزمائی کرنے لگا کہ پوچھو واللہ میں تو مرنے سے پہلے مر گئی۔ نیم شب اور ایک چھڑے چھانٹ کا مجھ سے یہ سلوک، میں بیچاری حیا کی ماری، خاندانی شرافت اتنی کہ بدنامی کے ڈر سے چاہوں بھی تو چیخ نہ پاؤں۔ زبردستی کی ساری سنی سنائی خبریں میرے ڈھکن میں گردش کرنے لگیں۔ حواس پوری طرح گم ہونے سے پہلے کچھ سمجھ آئی کہ ٹی بی کا مریض بنا میرے ہونٹوں سے کھانسی کی شراب پینے کا متمنی ہے۔ کب تک میری ناتواں جان لڑتی؟ مرتی کیا نہ کرتی اپنا آپ اسکے رحم و کرم پر چھوڑ دیا۔ آخر کو ڈھکن کھلا اور احسان فراموش نے منہ سے لگا کر مجھ میں بچے باقی دونوں چمچ بھی غٹا غٹ پی لئے اور مجھے کوڑے کی ٹوکری میں پھینک دیا۔ ہوتی میں بھی کوئی کوٹھے والی تو کام نکلنے کے بعد شائد آپ انسانوں کے وقت سے چند لمحے ”مزید“ کشید کر لیتی۔ لیکن مجھے تو آپ انسانوں کی طرح شکوے کی کوئی اجازت ہی نہیں، خوشی ہے کہ خاتمے سے پہلے کسی کے کام تو آئی۔
اور اس سب کے باوجود بدنام کون؟ ”بوتل“۔

تبصرہ نہ کرنے والے کا منہ کالا

ابتک تبصرہ جات 38

 1 

اس سب کے باوجود بدنام کون؟
!
!
!
”ڈفر“

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:46 شام

ڈفر کی بدنامی کی تو جملہ وجوہات ہی کچھ اور ہیں لیکن آپ جو سمجھ رہے ہیں اس الزام کو قبول کرنا بذات خود فخرکی بات لگ را 😀

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 19, 2014 بوقت 5:28 شام
Aurangzeb , Mahwish
 2 

کیا منظر کشی کی ہے … نام بدل کر گلشن گروور رکھ لیں. ..
مثال یاد آ گئی کهائے تو بھیڑئیے کا منہ لال
نہ کهائے تو بھیڑئیے کا منہ لال

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:48 شام

گلشن گروور؟ نہ کریں
ہمارے مقدر میں گھسی پٹی کترینہ بھی نہیں اور گروور ساب تو اسکی بونی کرانے والوں میں سے ہیں

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 19, 2014 بوقت 5:48 شام
 3 

مرشد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔قصور آپ کا نہیں ۔۔۔بوتلیں ہی لڑکھڑا کر آپ کے چرنوں میں آ گرتی ہیں۔
منہ لگاؤ تو بھی ٹھڈا مارو توبھی
۔
۔
۔
۔ بدنام ڈفر

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:48 شام

فار گاڈ سیک، ان معصوموں کو بوتلیں تو مت کہیں 😀

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 19, 2014 بوقت 5:50 شام
عثمان سہیل
 4 

“آدھی رات کو ڈفر” والے پیرے میں مصنف کے تحت الشعور میں پلنے والی لائف ٹائم خواہشات کسی بے رنگ و بو گیس کی طرح در آئی ہیں۔۔۔۔۔۔۔
ڈفر کو شکر گزار ہونا چاہئے کی ابھی تک جغادری و ثقہ نقاد حضرات نے بلاگز کا رخ نہی کیا ورنہ مندرجہ بالا ٹائپ تبصروں کے بعد سچ مچ اسی کمینی بوتل کو سینے سے لگائے بیٹھے ہوتے۔
ہمیں تو پڑھ کر مزہ آیا۔ لکھتے رہیں اور جیتے رہیں

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:51 شام

ایسے مت کہیں انکل جی
میری خواہشات کو خالص میتھیں گیس سے ہی ملا دیا 🙁
کمینی بوتل سے آپ کی مراد ”بوتل“ ہی ہے نا؟
اور گلے سے لگانے کا مطلب بھی ”گلے“ سے لگانا؟

اسے ذرا جوابیں تو سہی

عثمان سہیل
فروری 20 , 2014 بوقت 1:07 صبح

@DuFFeR Dee,
ذاتی تبصرہ تو آخر میں لکھا ہے جبکہ اولالذکر وہ تبصرہ ہے جو پیشہ ور نقاد حضرات کی یہاں عدم موجودگی کے باعث نہ ہوسکا۔
بوتل سے مراد وہی بوتل جو آپ بچپن میں سودا سلف کی رقم سے بچا کر پیا کرتے تھے یعنی کوکا کولا

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 20 , 2014 بوقت 10:35 صبح

@عثمان سہیل، بچپن میں تو ہمیں مرنڈا پسند تھی۔ کوکا کولا ایک دفعہ جیتی تھی فینٹے کے ڈھکن میں سے نکلی تھی۔ یاد ہے وہ منی کوکا کولا آئی تھی ڈھائی روپے والی؟ وہ
آپ کو کہاں یاد ہو گا اب اس عمر میں، اتنی پرانی بات بھی نہیں 😀
اور درست فرمایا، پیشہ ور یا دیہاڑی دار، نقاد تو یہاں آتے ہی نہیں۔ بس فنون لطیفہ کے چاچے مامے آتے ہیں جن سے ہمیں اصلاح کی قطعا امید نہیں
آپ کو اس اعزازی عہدے پر اپائنٹتے ہوئے ہمیں دلی خوشی ہو رہی ہے 🙂

فروری 19, 2014 بوقت 5:54 شام
ڈاکٹر حافظ صفوان محمد چوہان
 5 

مولانا فضول الرحمٰن نے کہا ہے کہ وہ باطل کو نہیں چھوڑیں گے۔ واقفانِ حال کہتے ہیں کہ ان کے نزدیک باطل اصل میں bottle ہے۔ جس دن سے یہ بیان دیا گیا ہے، مری بریوری والوں نے سیکورٹی بڑھا دی ہے۔ عن قریب باٹلان باطل سے battle شروع کردیں گے۔

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:52 شام

ہاہاہاہاہا ہاپس ساپ بڑے دور کی کوڑی لے کر آئے ہیں
ویسے آپ کی خبر اور سورس پر یقین کرنا بنتا ہے
آپ اندر کے بندے جو ٹھہرے 😉

اسے ذرا جوابیں تو سہی

عثمان سہیل
فروری 20 , 2014 بوقت 1:13 صبح

@DuFFeR Dee,
جنابِ والا دور کی کوڑی لانا ہی تو محققانہ شان ہوئے ہے

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 20 , 2014 بوقت 10:32 صبح

@عثمان سہیل، تحقیق تحقوق کوئی نی ہے، ڈیزلی گروپ سے غداری کے مرتکب ہوئے ہاپس ساپ
بس اب انکے ہیڈکوارٹر کے بدلے کا انتظار کرو آپ

فروری 19, 2014 بوقت 6:00 شام
ابو ارمان
 6 

واو زبردست. ۔۔۔۔۔

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:52 شام

مہربانی جناب 🙂

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 19, 2014 بوقت 6:02 شام
sehrish
 7 

duffer…. Bohat khoob
Bohat dino k bahd pahra, good laga
jeete raho

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 8:54 شام

بہت شکریہ جی
کہاں رہ گئی تھیں آپ؟؟؟
کتنے دنوں سے مس یو مس یو کر را تھا میں
اب آتی جاتی رہئے گا پلیز 🙂

اسے ذرا جوابیں تو سہی

sehrish
فروری 19 , 2014 بوقت 9:29 شام

@DuFFeR Dee, ni maherbani, ap se doori he achi 😛

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 11:11 شام

کیوں؟ میں کیا برڈ فلو وائرس ہوں؟ 🙁

فروری 19, 2014 بوقت 7:24 شام
 8 

لگتا ہے بوتلوں نے خوش کر دیا آپ کو جو اتنی ہمدردانہ تحریر لکھ ماری

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 19 , 2014 بوقت 11:11 شام

بوتلوں ہمارے رشتے کو کسی بھی معیوب نظر سے دیکھنے اور بہتانی کمنٹ کرنے والے کے کمپیوٹر سے اللہ کرے دھواں نکل جائے۔ قسم لے لو جو آج تک پیشاب ٹیسٹوانے کے لئے بھی بوتل استعمالی ہو

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 19, 2014 بوقت 10:18 شام
ڈاکٹر حافظ صفوان محمد چوہان
 9 

باٹل سے دبنے والے اے آسماں نہیں ہم
سو بار کرچکا ہے تو امتحاں ہمارا

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 20 , 2014 بوقت 10:29 صبح

نہیں حافظ صاحب، آپ کے اقبالی کانسیپٹ درست نہیں ہیں، آپ کو اقبالیات میں ایک ریفریشر کورس کی سخت ضرورت ہے

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 19, 2014 بوقت 11:53 شام
حجاب
 10 

پوسٹ پڑھنے کے بعد میں اس نتیجے پہ پہنچی کہ ” آپ کو کھانسی ہے “

اسے ذرا جوابیں تو سہی

عثمان سہیل
فروری 20 , 2014 بوقت 1:21 صبح

@حجاب,
وجہ تو ڈفر بھی یہی بیان کرتے ہیں مگر حاسدین کا خیال جسے بدگمانی ہی کہنا چاھئے ہے کہ ڈفر نشے کے واسطے کھانسی کا شربت غٹا غٹ چڑھاتے ہیں

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 20 , 2014 بوقت 10:31 صبح

@عثمان سہیل، بس جی اب کہاں ملتے ہیں وہ کھانسی کے خالص شربت جو ہمارے زمانے میں ملا کرتے تھے۔ اب تو بندہ یہ شربت پی کے نشئی کم ہوتا ہے لڑھکتا زیادہ ہے

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 20 , 2014 بوقت 10:30 صبح

کھانسی نہیں کتا کھانسی، بولے تو مجھے جب بھی کھانسی ہوتی ہے ٹی بی ٹائپ ہوتی ہے

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 20, 2014 بوقت 12:53 صبح
 11 

بیہودہ بکواس ہے – اس میں طنز ہے نہ مزاح صرف بیہودگی سے ہنسانے کی کوشش کی ہے وہ بھی ناکام

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 20 , 2014 بوقت 1:19 شام

بس جی کیا کریں۔ پتہ نی کیا ہو گیا آج کل، میں تو اسی لئے خود بھی نہیں پڑھتا ایسی ویسی بکواس

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 20, 2014 بوقت 1:10 شام
 12 

اچھا لکھا ہے،پوسٹ میں اتنی لچک اور کوم پیٹی بیلیٹی ہے کہ اپنے اپنے کیلیبر کے مطابق جس کو جو سمجھنا ہو، بآسانی سمجھ سکتا ہے۔

اسے ذرا جوابیں تو سہی

DuFFeR Dee
فروری 21 , 2014 بوقت 4:42 صبح

بہت شکریہ جی، اگر یہ کوئی طنز ہے تو بھی میں اس کو تعریف والے خانے میں درج کر لیتا ہوں 😀

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 21, 2014 بوقت 1:52 صبح
mubashir
 13 

buhat umda

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 21, 2014 بوقت 10:16 صبح
 14 

😈

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 23, 2014 بوقت 9:04 شام
 15 

سمجھا
👿

اسے ذرا جوابیں تو سہی

فروری 23, 2014 بوقت 9:05 شام
 16 

بہت عرصے کے بعد ایسا بلاگ ملا ہے، جس کو پڑھنے کو دل کرتا ہے، اللہ کرے زور قلم (کی بورڈ) اور زیادہ۔

آپ کے ساتھ ہونا یہ چاہیے کہ آپ کو بوتل میں بند کر کے سمندر میں پھینک دیا جائے، دو تین سال میں تیر کر کینیڈا کے ساحل پر پہنچ جاؤ گے۔
ویسے کسی بوتل میں سے پاکستانی نکل آیا تو انہوں نے آئندہ بوتل کو ہاتھ لگاتے ہوئے بھی ڈرنا ہے۔
ملایشیا میں بوتل نہیں کین یا پھر ٹھنڈے گرم مشروب پلاسٹک بیگ میں پائپ لگا کر ، پیتے جاؤ، ٹن ہونے کا کوئی خطرہ نہیں۔ نہ شیشے کو بطور ہتھیار استعمال کرنے کا لاہوری ہنر۔

اسے ذرا جوابیں تو سہی

مارچ 6, 2014 بوقت 6:44 صبح
 17 

کسی نے کتنا صحیح نام رکھا ہے تمہارا ڈفر

اسے ذرا جوابیں تو سہی

جولائی 8, 2014 بوقت 5:46 شام
محور
 18 

عمدہ

اسے ذرا جوابیں تو سہی

جولائی 8, 2015 بوقت 6:07 شام

لنک پوسٹ کرنے کی اجازت نہیں، سپیس ڈال کر لنک بریک کردیں، ربط والے تبصرے ختم کر دئے جاتے ہیں

نام (*)
ای میل (ظاہر نہیں کیا جائے گا)*
ویب ایڈریس
پیغام

Follow us on Twitter
RSS Feed فائر فاکس پر سب سے بہترین نتائج واپس اوپر جائیں
English Blog